Blog

Facebook Feed

داستان باھو
ناول دی سپرٹ آف اے سلطان کا اردو ترجمہ
یہ ناول اور داستان کے طرز پر لکھی گئی ایک بہت ہی دلچسپ اور ایمان افروز
کتاب ھے ناول کے انداز اور داستان کی شکل نے اسے شاھکار بنا دیا ھے جس
نےبھی اس کاب کو پڑھا ھے وہ اس کی تعریف کئے بغیر نہں رہ سکا۔ اس کتاب
کو پزھ کر سلطان باھو کے عشاق اور عقیدت مندوں میں ایک خوشگوار کہرام مچ
جائے گا اور ایک دل خوش کن دھوم کا سماں پیدا ھوگا۔
خامہ انگشت بد ندان کہ اسے کیا لکھیے
ناطقہ سر بہ گریباں کہ اسے کیا کہیے
حضرت سلطان با ھو رح بر اتنی دلکش اور نادر روزگار کتاب آج تک کسی نے نہیں
پزھی ھوگی۔ سلطان با ھو کے والد محترم محمد بازید نے حاکم ملتان کی امر کوٹ کے
را جہ بلور سنگھ کے درمیان جنگ میں بہا دری کے جوھردکھائے ان کو ڈاکٹر جاوید احمد
نے بڑے دلکش انداز میں بیان کر کے محمد بازید کو لازوال ابدیت سے ہم کنار کر دیا ھے۔
ساطان باھورح تو دنیا میں آئے ہی اسی لیے تھے کہ لوگوں کے دلوں میں
عشق الہی کی جوت جگا ئیں۔ انہوں نے طالبان حق کو مراقبہ خداوندی کا درس
دیا۔ جو رب ذوالجلال سے وصال اور اتصال کا واحد ذریعہ ھے۔ تصور اسم الله ذات
آپ کا بے مثل اصول مراقبہ ھے۔ یہ مراقبہ کی ایک یقینی اور قطعی تکنیک ھے جو
طالب کو بتدریج حضوری حق تعالی تک صعود کراتی ھے۔
آپ صوفیانہ ما بعداطبعیات کی آفا قی صدا قتوں کے پرچار میں ایک نابغہ روزگار
کی حیثیت رکھتے ھیں۔ آپ نے اپنی کتب میں تصور اسم ذات کے مراقبی ارتکاز پر
پورے شرح و بسط سے روشنی ڈالی ھے۔اس ضمن میں آپ کا کلام نا قابل بیان رفعتوں
کو چھوتاھے۔ آپ نے روحانی کیمیا تصور اسم ذات کے اساس اور حقیقت حق کی یافت
کے تصوراتی رستے کو پوری عمیق نظری سے پرکھا اور جانچا ھے۔ آپ کے نزدیک
تصور ایک ایسے طرز استغراق پر منتج ہوتا ھے جس حق سچ آشکار ھو جاتا ھے۔
ملنے کا پتہ۔
دربار فیض ریور ویو ھاؤ سنگ سوسائٹی راونڈ روڈ لا ھور
حضرت فقیر عبدالحمید سروری قادری نوری دربار کلاچی ڈیرہ اسما عیل خان
فون نمبر 03004640966
... See MoreSee Less

View on Facebook

جلوہ گاہ ۔۔۔۔ جلوہ گاہ
جن لوگوں کو معر فت الہیہ کی خوا ھش بےقرار رکھتی ھے
یہ کتاب ان کی بے چینی کا مداوا کرے گی ان کو بحر وحدت
کا شناور بنائے گی اور انھیں لله تعالی کی پر نور اور محبت سے
معمور حضوری میں لے جائے گی اس میں مصنف نے تصور اور
مراقبہ اسم لله ذات کا لایحہ عمل پیش کیا ھے اور اپنے روحانی واقعات
اور باطنی مشاھدات سےان کی وضاحت کی ھے یہ تصنیف لطیف ایک
صوفیانہ ذھن کے ارتقا کی داستان ھے جس سے عصر حاضر کے ایک
صوفی با صفا اور جبہ و د ستار سے بے پروا درویش گزرے اور تصور
اسم ذات اور عشق سرور کائنات کے بدولت نور حضور میں غرق ہو کر
مشرف دیدار پروردگار ھوگئے کتاب کیا ھے صلائے عام ھے اپنے اصلی
منبع و ماخذ یعنی ذات حق تعالی کا عرفان حاصل کرنے کے لئے
ملنے کا پتہ۔
دربار فیض ریور ویو ھاؤ سنگ سوسائٹی راونڈ روڈ لا ھور
حضرت فقیر عبدالحمید سروری قادری نوری دربار کلاچی ڈیرہ اسما عیل خان
فون نمبر 03004640966
This book and my other book Dastan e Bahu is available from:
Darbar e Faiz, Riverbiew Housing Society, Raiwind Road ,
... See MoreSee Less

View on Facebook